مسئلہ کشمیر، بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کی پاس داری کرے

جدہ: او آئی سی نے کشمیر سے متعلق رابطہ گروپ کے اجلاس کا اعلامیہ جاری کر دیا، جس میں کشمیریوں کی شناخت اورجغرافیائی حیثیت تبدیل کرنے پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے.

اعلامیہ کے مطابق مقبوضہ کشمیرپربھارتی اقدام عالمی قوانین، خودبھارتی وعدوں کےبرعکس ہیں، اقدام مسلم اکثریتی علاقےکو ہندو اکثریت میں تبدیل کرنے کی کوشش ہے.

Related Posts

رابطہ گروپ نے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر یو این ہائی کمشنرکی رپورٹس، پاکستان کی درخواست پرسلامتی کونسل کے 16 اگست کےاجلاس کا خیر مقدم کیا، رابطہ گروپ نے یو این سیکریٹری جنرل کے 8 اگست کے بیان کا بھی خیرمقدم کیا ہے.
اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ جموں وکشمیر بھارت اور پاکستان کے درمیان بنیادی تنازع ہے، خطے میں امن کے لئے یواین قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کا حل ضروری ہے، بھارت یک طرفہ اقدامات واپس لے.

او آئی سی رابطہ گروپ نے مطالبہ کیا کہ بھارت سلامتی کونسل کی قراردادوں کی پاس داری کرے، پرامن مظاہرین کےخلاف طاقت کااستعمال بند کرے.

تمام اسیروں کوفی الفور رہا کیا جائے، کالے قوانین واپس لے اور انسانی حقوق کی تنظیموں کو رسائی دے.

You might also like