بھارتی مظام کی کشمیریوں کے حوصلے کے سامنے شکست

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کے مظالم بیسویں روز بھی جاری ہیں لیکن کشمیریوں کے جذبہ آزادی اور طاقت ایمان کے سامنے بھارتی افواج اور بھارتی حکومت کا جبر بے اثر نظر آرہا ہے۔ اس کا واضح ثبوت یہ ہے کہ گزشتہ روز نماز جمعہ کے بعد کرفیو اور دیگر بنیادی ضروریات زندگی پر پابندیوں کے باوجود کشمیری عوام اپنے رہنماؤں کے ہمراہ سڑکوں پر نکل آئے۔ کشمیر کی فضا بھارت مخالف اور پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونج اٹھی۔ ان احتجاجی مظاہروں میں خواتین اور بچوں کی بھی ایک بڑی تعداد شریک تھی جبکہ بھارتی افواج نے ان مظاہروں پر شیلنگ اور پیلٹ گن سے فائرنگ بھی کی جس کے نتیجے میں متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے۔ سرحد کی دوسری جانب آزاد کشمیر میں شہری اور صحافی ایک بڑی تعداد میں جمع ہورہے ہیں جو چکوٹھی کے مقام پر کھانے پینے کی اشیاء اور ادویات لے کر ایل او سی کی طرف بڑھیں گے اور ان کا مطالبہ یہ ہے کہ بین الاقوامی فلاحی تنظیم ریڈ کراس یہ چیزیں مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام میں تقسیم کردے دوسری جانب فرانس میں جی سیون کے اجلاس میں شرکت کے لیے آئے بھارتی وزیراعظم کے خلاف پاکستانی اور کبھی میدان میں اتر آئی ہے اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا عالمی ادارے اس جارحیت پر انہیں کوئی لگام ڈالتے ہیں یا بھارتی حکومت اور بھارتی افواج اپنی ہٹ دھرمی پر قائم رہے گی۔

احتشام الحق
You might also like