مہنگائی

ملک بھر میں مہنگائی کا جن اب بھی بوتل میں بند نہ کیا جاسکا۔ موجودہ صورتحال میں ہر طبقہ ملک کے معاشی بدخالی کے شکنجہ میں ہے اور چاہے امیر ہو یا غریب ہر شخص مہنگائی سے پریشان دیکھائی دیتا ہے۔ حالات اب اس نہج پر پہنچ چکے ہیں کہ بنیادی سبزیاں بھی عام عوام کی پہنچ سے کوسوں دور دکھائی دیتی ہیں۔ دیگر سبزیوں کے ساتھ ساتھ ٹماٹر کی قیمت میں بھی خوش روبہ اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ ٹماٹر 320 سے 400 کے درمیان فروخت ہو رہا ہے۔1 کلو ٹماٹر کے حصول کے لئے بھی 4 لال نوٹ دینا پڑ رہے ہیں۔ سبزیوں کی قیمت میں ہوش روبہ اضافہ حکومتی معاشی استحکام کے دعوؤں کی قلعی کھول رہا ہے تو دوسری جانب مشیر خزانہ کےٹماٹر کے 17 روپے کلو فروخت کرنے کے دعوے کے غبارے سے ہوا اس وقت نکل گئی جب ایک سنئیر وزیر نے ہی اس بات کی تردید کردی۔ لیکن اس ساری صورتحال میں نقصان صرف عوام کا ہی ہو رہا ہے۔ زیادہ تشویشناک بات یہ ہے کہ حکومت اس صورتحال سے کوئی موثر حکمت عملی ترتیب دینے میں ناکام نظر آ رہی ہے۔ اگر اس صورتحال کو قابو نہ کیا گیا تو صورتحال مزید بگڑ جاۓ گی اور عوام کے لئے ان بنیادی ضرورتوں کا حصول بھی ممکن نہیں رہے گا اور پھر بگڑتی صورتحال کو کنٹرول کرنا شاید کسی کے بھی بس میں نہ رہے۔

You might also like